(7) It is also the tense used for  general or universal  truth or present facts.
مستقبل حقائق یا عالمیگیر حقیقت کا اظہار کرنے کے لئے بھی simple present  استعمال کرسکتے ہیں۔

EXAMPLES:

(a)      The moon controls the tides.

چاند مدوجزر کو کنٹرول کرتا ہے۔(یا) مدوجزر چاند کے باعث بنتے ہیں۔

(b)      The sun rises and sets daily.

سورج روزانہ طلوع اور غروب ہوتاہے۔

(c)       Children usually grow fast.

بچوں کی نشوونما عموماََ تیزی سے ہوتی ہے۔

(d)      Two and two make four.

دو اور دو چاریوتے ہیں۔

(e) Man is mortal.

انسان فانی ہے۔

(آپ پہلے پڑھ چکے ہیں کہ Simple presentمیںam, are, is  بطورِامدادی افعال استعمال نہیں ہوتے یہاں ‘e’ جزمیںis بطور main verbیاprincipalverbاستعمال ہواہے۔

(English Grammar and Usage by Lee Kok cheong, Ngoh Geok Lun and Athur Yap P-92)

(8) In exclamatory sentences beginning with here and there to express what is actually taking  place in the present.

ایسے جملے جن میں کسی بات کا بے ساختہ اچانک اظہار پایا جائے اُن میں hereاورthereکے ساتھ simple present استعمال کیاجاتاہے۔اس لحاظ س اُسے Exclamatory Present  کہاجاتاہے۔

 

EXAMPLES:

(a)      Here comes the bus.

لو بس آرہی ہے۔(یا)لو بس آگئی ہے

(b)      There she goes.

لو وہ جارہی ہے(یا) لو وہ چلی گئی ہے

(c)       Here they are!

لو وہ آگے ہیں!

(d)      Here comes the bride!

لو دلہن آگئی ہے!(لو ہو دلہن آرہی ہے)

(High School Grammar and Composition by Wren and Martin P-68)

 

(9) Do and does are used for the sake of emphasis.

Such a use is known as Emphatic Present.

DoاورDoesاس ٹینس میں بطور تاکید بھی استعمال ہوتے ہیں۔اس لحاظ سے simple present کو Emphatic Present بھی کہا جاتاہے۔

EXAMPLES:

(a)      He does work.وہ واقعی کام ہے۔

(b)      I do know him.میں واقعی اُسے جانتاہوں۔

(c)       We do play cricket.ہم واقعی کرکٹ کھیلتے ہیں۔

(d)      She does drink milk.وہ واقعی دودھ پیتی ہے۔

(d)Imran does work hard.عمران واقعی محنت کرتاہے۔

(Idiom, Grammar and Synthesis by J.C.Nesfield P-62)

Go To Next Page………