EXAMPLES: (a)      If I had a lamp, I would lend it to you.

اگر میرے پاس لیمپ ہوتا تو میں تمہیں اُدھاردے دیتا۔

جملے میں واضح ہے کہ لیمپ درحقیقت متکلم کے پاس نہیں ہے۔

(b)      If I lived near my office I would be in time for work.

اگر میں اپنے دفتر کے قریب رہ رہا ہوتا تو میں کام کو وقت پر پہنچتا۔(یعنی درحقیقت میں نہیں رہ رہا)

(c)       If I were you, I would kill him.

اگر میں آپ کی جگہ ہوتا تو میں اُسے مارڈالتا(مگر حقیقت یہ ہے کہ میں آپ کی جگہ نہیں تھا)

(d)      If a thief came into my room, I would scream.

اگر چور میرے کمرے میں آگیا تو میں چلاوں گا۔

(یہاں improbability کا اظہار ہے کہ اگر چہ اس بات کا احتمال(یا امکان)نہیں ہے کہ چور میرے کمرے میں گھس آئے۔مگر پھر بھی اگر وہ آگیا تو میں چیخوں گا)

(e)      If I dyed my hair black, everyone would laugh at me.

اگر میں نے اپنے بال کالے کر لئے تو ہر ایک مجھ پر ہنسے گا۔(اس جملے میں improbability کا اظہار ہے کہ گو یہ بات ممکن نہیں ہے، یا میرا ارردہ نہیں ہے کہ میں اپنے بال کالے کروں گا مگر پھر بھی  اگر میں نے اپنے بال کالے کرلیے تو سب مجھ پر ہنس گے۔

(Grammar of Contemporary English by Randolf Quirk, Sidney Greenbaum, Jan Svartvik and Geoffery Leech P-86 and Practical English Grammar by Thomson and Martinet P-198)

(7) The simple past is also related to the attitudes of the speaker rather than to the time, Hence, it is more polite to ask somebody about something by using this tense.

یہ ٹینس(کبھی کبھار)وقت کی بجائے بولنے والے کا طرزعمل بھی بتاتاہے لہٰزا کسی سے کوئی بات پوچھنے کیلئے اس ٹینس کے استعمال میں زیادہ شائستگی پائی جاتی ہے۔ اس لحاظ سے simple past کو attitudinal pastبھی کہا جاتاہے۔

EXAMPLES:

(a)      Did you want to see me now?

کیا آپ اب مجھ سے ملنا چاہتے ہیں؟

(b)      Did you tell him?

کیا آپ نے اُسے بتایا ہے؟

(c)       Did you come back soon?

کیا آپ جلدی واپس آئیں گے؟

(d)      I wondered if I could use your phone.

سوچتا ہوں کہ کیا میں آپ کا فون استعمال کرلوں؟

(Grammar of Contemporary English by Randolf Quirk, Sidney Greenbaum, Jam Svarkvik and Geoffery Leech P-86)

(8) We use simple past to ask when something happened.

یہ ٹینس یہ بات پوچھنے کیلئے بھی استعمال کیا جاتاہے کہ کوئی کام کب ہوا۔

EXAMPLES:

(a)      What time did they arrive?

وہ کس وقت پہنچے؟

(b)      When did it start raining?

بارش کب برسنا شروع ہوئی؟

(c)       It started raining at one o’clock.

ایک بجے بارش برسنا شروع ہوئی۔

(d)      They first met when they were at school.

ان کی پہلی ملاقات اُس وقت ہوئی جب وہ سکول میں(پڑھ رہے)تھے۔

(e)      When did Rashid and Majid meet?

راشد اور ماجد کی ملاقات کب ہوئی؟

(English Grammar in Use by Raymond Murphy P-38)

(9) Note the structure how long is it sine + simple

Past.

مزکورہ بالا structure یہ بتانے کیلئے استعمال کی جاتی ہے کہ کوئی کام کئے ہوئے کتنا عرصہ ہوگیا ہے اور اب وہ مزید نہیں ہو رہا۔

EXAMPLES:

(a)      How long is it since you had a holiday?

کتنا عرصہ ہوگیا ہے جب تمہیں چھٹی ملی تھی(یا کتنا عرصہ قبل تمہیں چھٹی ملی تھی؟)

(b)      It is two years since I had a holiday?

دو سال قبل مجھے چھٹی ملی تھی(یا دو سال ہوگئے ہیں کہ مجھے چھٹی نہیں ملی)

(c) How long is it since you met him?

کتنا عرصہ ہوگیا ہے کہ تم اُس سے ملے تھے( یا کتنے عرصہ قبل تم اُس سے ملے تھے؟)

(d) It is long since I met him.

اُس سے ملے ہوئے ایک طویل عرصہ ہوگیا ہے۔(یا اُس سے بہت عرصہ پہلے ملا تھا)

(e) How long is it since imran visited us.

بہت عرصہ ہوگیا ہے کہ عمران ہمارے ہاں نہیں آیا۔

(English Grammar in Use by Raymond Murphy P-38)

English Grammar in Urdu